دانش جانتا تھا کہ سکون صرف قبر ہے

پاکستان کے مقبول ترین ڈرامے ’’میرے پاس تم ہو‘‘ کی آخری قسط اور ڈرامے کے مرکزی کرداردانش کی موت نے سوشل میڈیا پر طوفان مچا رکھا ہے

مصنف خلیل الرحمان قمر کے لکھے ہوئے ڈرامے’’میرے پاس تم ہو‘‘نے مقبولیت کے ریکارڈ توڑ دئیے۔ ڈرامے میں ہمایوں سعید ، عائزہ خان اورعدنان صدیقی نے مرکزی کردار ادا کیے تھے۔ ہمایوں سعید نے دانش نامی شخص کا کردار اداکیا تھا جو اپنی بیوی سے بہت محبت کرتا ہے تاہم اس کی بیوی مہوش(عائزہ خان) ایک امیر شخص اور پیسوں کے لیے اپنے شوہر کو دھو کا دے کر شہوار(عدنان صدیقی) کے ساتھ چلی جاتی ہے

پاکستان کے مقبول ترین ڈرامے ’’میرے پاس تم ہو‘‘ کی آخری قسط اور ڈرامے کے مرکزی کرداردانش کی موت نے سوشل میڈیا پر طوفان مچا رکھا ہے اور ڈرامے کے اختتام کو لے کر نہ صرف مزاحیہ پوسٹس بڑی تعداد میں شیئر کی جارہی ہیں بلکہ لوگ ان پوسٹس کے ذریعے ڈرامے کے المناک اختتام پر اپنی رائے کا بھرپور اظہارکرتے نظر آرہے ہیں۔
کراچی(ویب ڈیسک) ہدایت کارو مصنف خلیل الرحمان قمر کے لکھے ہوئے ڈرامے’’میرے پاس تم ہو‘‘نے مقبولیت کے ریکارڈ توڑ دئیے۔ ڈرامے میں ہمایوں سعید ، عائزہ خان اورعدنان صدیقی نے مرکزی کردار ادا کیے تھے۔ ہمایوں سعید نے دانش نامی شخص کا کردار اداکیا تھا جو اپنی بیوی سے بہت محبت کرتا ہے تاہم اس کی بیوی مہوش(عائزہ خان) ایک امیر شخص اور پیسوں کے لیے اپنے شوہر کو دھو کا دے کر شہوار(عدنان صدیقی) کے ساتھ چلی جاتی ہے۔

اس ڈرامے نے اور ڈرامے میں ادا کیے گئے مکالموں نے پاکستانیوں کو جذباتی طور پر اتنا متاثر کیا کہ ہر ہفتے ڈرامے کی نئی قسط نشر ہوتے ہی ٹوئٹر پر ٹاپ ٹرینڈنگ میں ہوتی تھی، یہی وجہ تھی کہ ڈرامے کا اختتام سسپنس میں رکھنے اور اس کی آخری قسط کو سینما میں ریلیز کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور گزشتہ روز پاکستانیوں کی بڑی تعداد ڈرامے کا اختتام دیکھنے سینما پہنچی۔

’میرے پاس تم ہو‘‘ کا اختتام ڈرامے کے مرکزی کردار دانش کی ہارٹ اٹیک سے موت پر ہوا جس نے لوگوں کو نہ صرف جذباتی کردیا بلکہ بہت سے لوگ ڈرامے کے اختتام سے ناخوش بھی نظر آئے۔ جب کہ گزشتہ روز ڈرامے کے حوالے سے لوگوں نے سوشل میڈیا پر مزاحیہ پوسٹس شیئرکرکے ڈرامے سے متعلق اپنے جذبات کا بھرپور اظہار کیا۔ ڈرامے کے اختتام اور دانش کی موت پر جو پوسٹ سب سے زیادہ وائرل ہوئی وہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بولے گئے ایک جملے پر بنائی گئی میم تھی ’’دانش جانتا تھا سکون صرف قبر میں ہے۔‘‘

( خبر جاری ہے )

Comments
Loading...