ملازمین نہ ہاتھ ملائیں اور نہ بغلگیر ہوں، پشاور ہائیکورٹ نے پابندی عائدکردی

رجسٹرار پشاور ہائیکورٹ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ملازمین روایتی طریقے سے بغلگیر ہونے اور ہاتھ ملانے سے گریز کریں

پشاور(ویب ڈیسک)پشاور ہائیکورٹ نے ملازمین کو کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے ہدایات جاری کر دیں۔ رجسٹرار پشاور ہائیکورٹ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ملازمین روایتی طریقے سے بغلگیر ہونے اور ہاتھ ملانے سے گریز کریں۔ دستاویز میں کہا گیا ہے کہ بخار یا کھانسی کا شکار ملازمین ماسک پہن کر آئیں اور ملازمین کی بائیو میٹرک حاضری عارضی طور پر روک دی جائے۔ ہائیکورٹ کے اعلامیے میں باتھ رومز میں کپڑوں کے تولیے کے بجائے ٹشو پیپر استعمال کرنے کی ہدایت بھی کی گئی ہے۔ پشاور ہائیکورٹ کے ملازمین کو روزانہ کی بنیاد پر نیا ماسک لگانے کی ہدایت بھی کی گئی ہے۔

 

( خبر جاری ہے )

پشاور ہائیکورٹ کے ملازمین کو صابن سے ہاتھ دھونے کی ہدایات جاری کی گئی ہے اور رجسٹرار پشاور ہائیکورٹ کی جانب سے جاری ہدایات نامہ عدالت کے مرکزی دروازے پر آویزاں کر دیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ گزشتہ برس چین سے سامنے آنے والا کورونا وائرس اب تک پاکستان سمیت دنیا کے 60 ممالک میں پھیل چکا ہے اور اس موذی وبا سے 3 ہزار سے زائد اموات واقع ہو چکی ہیں۔ پاکستان میں بھی 4 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے جن میں سے دو کراچی اور دو اسلام آباد میں زیر علاج ہیں۔ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے حکومت پاکستان نے ایران اور افغانستان سے ملحقہ سرحدوں پر آمدورفت معطل کر دی ہے اور ایران اور افغانستان سے آنے والے افراد کو قرنطینہ میں رکھنے کے بعد گھروں کو بھیجا جا رہا ہے۔

ملتی جلتی خبریں
Comments
Loading...