Browsing Category

پروفیسر سیف اللہ خان

ہڑتال کا فائدہ ہوا یا نقصان؟

ہڑتال کا فائدہ ہوا یا نقصان؟ | پروفیسر سیف اللہ خان بدھ اُنیس جولائی 2017ء کو مینگورہ کا پورا بازار سو فی صد بند رہا۔ سنا ہے کہ دوسرے قصبوں اور ملاکنڈ ڈویژن کے دوسرے اضلاع کے بازار بھی بند رہے۔ وجہ محکمہ بجلی کی طرف سے بجلی کی بہت زیادہ…

خٹک صاحب کی خوش فہمی

خٹک صاحب کی خوش فہمی | پروفیسر سیف اللہ خان صوبائی وزیراعلیٰ پرویز خٹک صاحب کافی تجربہ کار سیاسی شخص ہیں۔ ان کو سرکاری محکموں سے واسطے پڑتے رہے ہیں اور وہ اس حقیقت کو جانتے ہیں کہ بعض بلکہ اکثر سرکاری ملازمین سیاسی حکمرانوں کو خوش رکھنے…

گندہ ترین شہر

گندہ ترین شہر | پروفیسر سیف اللہ خان ایک نجی ٹی وی سٹیشن نے اپنی پچیس جولائی 2017ء شام چھے بجے کی نشریات میں بتایا تھا کہ ’’ورلڈ اکنامک سروے‘‘ نے اپنی سالانہ رپورٹ میں دنیا کے چودہ شہروں کو فضائی آلودگی کے حوالے سے گندہ ترین قرار دیا ہے…

محکمہ تعلیم

محکمہ تعلیم | پروفیسر سیف اللہ خان الراشی والمرتشی‘‘ ماحول میں جہاں اپنے مقصد اور غرض کے لیے چھوٹے اور عام قسم کے جرائم ہوتے ہیں اور جرائم کے لیے حکومتی پالیسیاں بنائی جاتی ہیں، وہاں مثبت تبدیلیاں لانا نہایت مشکل کام ہوتا ہے لیکن ناممکن…

ایک اور کنٹینر الٹ گیا

ایک اور کنٹینر الٹ گیا | پروفیسر سیف اللہ خان گیارہ یا بارہ جولائی 2017ء کو ایک نجی ٹیلی ویژن چینل نے خبر دی کہ پشاور کے قریب جھگڑا نامی گاؤں میں تیل لے جانے والا ٹرک الٹ گیا اور امدادی عملہ وہاں پہنچ گیا۔ تیل لے جانے والے ٹینکروں کے الٹ…

آپریشن ردالفساد اور آئی جی پی کا خط

آپریشن ردالفساد اور آئی جی پی کا خط | پروفیسر سیف اللہ خان پورا ایک سال قبل ستائیس جولائی 2016ء کے اخبارات نے یہ خبر شائع کی تھی کہ صوبائی انسپکٹر جنرل پولیس نے مرکزی حکومت کو ایک خط کے ذریعے تجویز دی تھی کہ ملک کے اندر وسیع پیمانے پر…

کیا یہ اقدام وطن دشمن نہیں

کیا یہ اقدام وطن دشمن نہیں | تحریر : پروفیسر سیف اللہ خان کسی بھی وطن یا معاشرے میں عوام کو مختلف قسم کی شکایات ہوسکتی ہیں۔ ایسا کوئی ملک یا معاشرہ کہیں بھی نہ ہوگا، جہاں عوام اور خواص سو فی صد مطمئن ہوں۔ کوئی بڑی یا چھوٹی، عام یا خاص…