سوات، ایک ہزار313 نابینا افراد کو روزگار مہیا کردیا گیا

تقریبا 13 13 بصارت سے محروم افراد نے نہ صرف تمام ضروری سامان کے ساتھ پاپ کارن مشینیں وصول کیں بلکہ مالاکنڈ ڈویژن میں ایس پی ایس کے تمام کیمپسز میں جگہیں بھی حاصل کیں

سوات(زما سوات ڈاٹ کام) پاکستان ایسوسی ایشن آف بلائنڈ (پی اے بی) کے خیبر پختونخوا کے صدر قاری سعد نور نے کہا ہے کہ نجی اداروں کو معذور افراد کے لیے نوکریوں میں 2 فیصد کوٹہ بھی نافذ کرنا چاہیے۔

وہ ملاکنڈ ڈویژن میں بصارت سے محروم افراد کو پاپ کارن مشینوں کے حوالے کرنے کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ تقریب کا اہتمام ایس پی ایس نے پاکستان ایسوسی ایشن آف بلائنڈ سوات چیپٹر کے اشتراک سے کیاتھا۔ تقریب میں پی اے بی کے صدر قاری سعد نور ، کمشنر ملاکنڈ ڈویژن ظہیر الاسلام ، ڈائریکٹر ایس پی ایس سید منور شاہ ، جوائنٹ سیکرٹری پی اے بی ، نور قریش ، صدر کے پی بیڈمنٹن ایسوسی ایشن ظفر علی کاکا ، طلباء ، سماجی کارکنوں اور معذور افراد کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

تقریبا 13 13 بصارت سے محروم افراد نے نہ صرف تمام ضروری سامان کے ساتھ پاپ کارن مشینیں وصول کیں بلکہ مالاکنڈ ڈویژن میں ایس پی ایس کے تمام کیمپسز میں جگہیں بھی حاصل کیں۔ قاری سعد نور نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایس پی ایس انتظامیہ کے فلاحی اقدام سے ہماری حوصلہ افزائی ہوتی ہے کہ وہ انتہائی نابینا بصارت سے محروم افراد کو کمائی کے مواقع فراہم کرنے میں مدد کریں۔

پی اے بی ، سوات چیپٹر کے رکن ظفر علی کاکا نے کہا کہ ان کی انجمن نے اچھی کمیونٹیوں کی مدد سے کمائی کے مختلف مواقع شروع کیے جن میں دودھ اور جوس کی دکانیں ، اور سوات میں بصارت سے محروم افراد کے لیے مہارت کی تربیت شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ان لوگوں کی حوصلہ افزائی نہیں کرنی چاہیے جو معذور افراد کو چندہ یا خیرات دیتے ہیں بلکہ ہمیں انہیں ملازمت یا کاروبار کے مواقع فراہم کرنے چاہئیں تاکہ وہ عزت کے ساتھ روزی کما سکیں۔

پرنسپل ایس پی ایس خلیل قاضی نے تمام شرکاء کو خوش آمدید کہا اور کہا کہ معذور افراد کو روزگار کے مواقع فراہم کرنا اور طلباء میں فلاحی جذبات پیدا کرنا اس سرگرمی کے پیچھے بنیادی مقاصد ہیں۔ انہوں نے کہا ، "ہمارے طلباء پاپ کارن فروخت کرتے وقت بصارت سے محروم افراد کی مدد کریں گے اور ان سے پاپ کارن بھی خریدیں گے۔”

عملی طور پر معذور افراد جنہوں نے اثاثے وصول کیے تھے انہوں نے کہا کہ وہ اب اپنے خاندانوں کے لیے دو وقت کے کھانے کا بندوبست کرنے کی بھیک نہیں مانگیں گے۔ پیکیج حاصل کرنے والے نابینا شخص ابراہیم نے کہا ، "ہم پاپ کارن مشینوں کے ذریعے اپنے خاندانوں کے لیے باعزت طریقے سے روزی کمائیں گے جس کے لیے ہم عطیہ دہندگان کے شکر گزار ہیں۔”

کمشنر ملاکنڈ ڈویژن ظہیر الاسلام نے کہا کہ پائیدار امن اور خوشحالی کے لیے پسماندہ معاشرے کے لیے سماجی بہبود کی سرگرمیاں ضرور ہونی چاہئیں۔

( خبر جاری ہے )

Comments
Loading...